ستمبر اور اکتوبر میں ہلدی کا یہ نسخہ اکسیر پی لیں اور ساری سردیاں مزے کریں

Posted by

ہلدی میں اتنے فائدے ہیں کہ ابھی تک میڈیکل سائنس کو اس کی پُوری افادیت کی جانکاری نہیں ہُوئی لیکن میڈیکل سائنس اپنی ہر نئی تحقیق میں ہلدی کا کوئی نہ کوئی نیا فائدہ تلاش کر لیتی ہے اور تسلیم کرتی ہے کہ ہلدی اینٹی بائیوٹک، اینٹی آکسائیڈینٹ، اینٹی کینسر ہونے کیساتھ ساتھ خون کی خرابیوں کو دُور کرتی ہے اور اسے صاف کرتی ہے اور کئی اور بیماریوں میں شفا کا درجہ رکھتی ہے۔

G:\Pics Sharing\800px-Turmeric_Powder_on_a_Spoon_-_Black_Background.jpg
formulatehealth, CC BY 2.0, via Wikimedia Commons

موسم میں تبدیلی کا آغاز جاری ہے اور سردیوں کی آمد اب نزدیک ہے اور ایسے وقت جب موسم تبدیل ہو رہا ہو انسان کا ایمیون سسٹم کمزور ہو جاتا ہے اور اکثر وائرل انفیکشن کا شکار ہو جاتا ہے ایسے میں کچی ہلدی اور ہلدی پاوڈر کا استعمال قوت مدافعت کو اتنا مضبوط بنا سکتا ہے کہ وہ وائرل جراثیموں سے جسم کی حفاظت کرے اور اسے بیمار ہونے سے بچائے۔

اس آرٹیکل میں ہلدی کے چند آسان گھریلو ٹوٹکوں کے ساتھ اسکے ایک ایسے نسخہ اکسیر کو شامل کیا جا رہا ہے جو سارے جسم کے لیے شفا کا باعث بنتا ہےاور اگر آپ اس نسخے کو اس بدلتے ہُوئے موسم سے استعمال کرنا شروع کر دیں تو یہ جہاں آپ کی قوت مدافعت کو مضبوط بنائیں گے وہاں آپ کو بلا وجہ بیمار نہیں ہونے دیےگا۔

نمبر 1 مسوڑھے مضبوط: ہلدی قدرتی اینٹی سیپٹیک اور اینٹی بیکٹریل خوبیوں سے مالامال ہے اور مسوڑھوں کی خرابی کی صورت میں کچی ہلدی کا جوس نکال کر ان پر ملنا اس سے سوزش کو ختم کرکے انہیں مضبوط بنانے کا باعث بنتا ہے اور اگر مسوڑھوں کی خرابی کیساتھ کھانسی اور بلغم کا بھی مسئلہ ہے تو ایک چوتھائی چمچ ہلدی گرم دُودھ میں مکس کر کے رات کو سونے سے پہلے پینا انتہائی فائدہ مند ثابت ہوتا ہے۔

نمبر 2 منہ کے چھالے: اگر منہ میں چھالے پڑے ہیں تو ہلدی کو نیم گرم پانی میں مکس کر کے غرارے کریں اور اس پانی سے کلی کریں یا کچی ہلدی کی گانٹھ کو بھون کر پیس لیں اور پھر اس سے دانتوں اور مسوڑھوں کی مالش کریں اور بعد میں تازہ پانی سے کلی کر دیں یہ آپ کے مُنہ کے چھالوں کے لیے ایک قدرتی دوا کا کام کرے گی اور تکلیف میں راحت لیکر آئے گی۔

نمبر 3 پرانی کھانسی اور بلغم: یہ بیماریاں بدلتے موسم کے ساتھ سر اُٹھاتی ہیں اور بے سکونی کا باعث بنتی ہیں لیکن اگر اس موسم میں آپ ہلدی اور شہد کا مکسچر بنا کر رکھ لیں اور اسے دن میں 2 سے 3 بار آدھی چائے کی چمچ کے برابر چاٹیں تو یہ آپ کے گلے سے انفیکشن کو ختم کر کے پھیپھڑوں اور گلے میں جمی بلخم خارج کر کے سانس میں راحت پیدا کرتی ہے اور کھانسی میں آرام دیتی ہے۔

نمبر 4 جوڑوں کا درد: یہ درد گرمیوں کے خاتمے کے ساتھ زیادہ تیزی سے محوس ہونا شروع کر دیتا ہے اس لیے رات کو سونے سے پہلے ایک کپ دُودھ میں ایک چائے کی چمچ ہلدی یا اگر ذائقہ زیادہ تیز محسوس ہو تو کم از کم آدھی چائے کی چمچ ہلدی شامل کریں اور گرم کر کے پی لیں۔

ہر بیماری کے لیے ہلدی کا نسخہ اکسیر

ہلدی برصغیر کی قدیم طب میں صدیوں سے بطور دوا استعمال ہو رہی ہے لیکن جیسے جیسے میڈیکل سائنس کو اس کی خصوصیات کا پتہ چل رہا ہے تب سے یہ یورپ اور امریکہ میں بھی کافی مقبول ہو رہی ہے اور وہاں ہلدی اور دُودھ کے مکسچر کو گولڈن ملک کا نام دیا جاتا ہے جو پاؤں کے ناخنوں سے لیکر سر کے بالوں تک جسم کے لیے انتہائی فائدہ مند ہے۔

اگر آپ چاہتے ہیں کہ موسم کی تبدیلی سے پیدا ہونے والی اور دیگر جسمانی بیماریاں آپ کے قریب بھی نہ آئیں، آپ کی ہڈیاں طاقتور ہوں، بال لمبے اور گھنے ہو جائیں، نظام ہضم پُوری طرح فعال ہو جائے، قوت مدافعت مضبوط ہو، شوگر اور دل کے امراض بہتر ہوں، ذہنی تناؤ ختم ہو اور موڈ اچھا رہے، یاداشت اور دماغ کو طاقت ملے اور جسم سے سوزش اور دردوں کا خاتمہ ہو جائے تو نیچے دئیے گئے طریقے سے ہلدی اور دُودھ کی چائے بنا کر روزانہ رات کو سونے سے پہلے پینا اپنی روٹین میں شامل کر لیں یہ آپ کے بڑھاپے کو جوانی میں بدل دے گی اور اگر آپ جوان ہیں تو یہ جوانی کو پرواز کرنے کی صلاحیت دے گی۔

ہلدی دُودھ بنانے کا طریقہ: ایک کپ ہلدی دُودھ تیار کرنے کے لیے دُودھ میں ایک چائے کی چمچ ہلدی، چھوٹا ٹکڑا ادرک کا یا آدھا چائے کے چمچ کے برابر ادرک پاوڈر، آدھا چائے کا چمچ دارچینی، ایک چٹکی کالی مرچ ڈالیں اور دُودھ کو اُبال آنے تک پکائیں اور پھر چھان کر اسے میں ذائقے کے لیے شہد ڈال لیں اور روزانہ استعمال کریں۔