نہار منہ ان کاموں کو کرنا صحت کو کئی طریقوں سے نقصان پہنچاتا ہے

Posted by

جس طرح صبح نہار منہ کچھ کھانے فائدہ مند ہوتے ہیں اور کچھ نقصان دہ اسی طرح خالی پیٹ کُچھ کام ایسے ہیں جو نہیں کرنے چاہیے کیونکہ ان سے صحت کو نقصان پہنچتا ہے۔ اس آرٹیکل میں ماہرین کی بتائے ہُوئے اُن کاموں اور کھانوں کو شامل کیا جا رہا ہے جن کے نہار منہ کرنے سے یا کھانے سے جسم میں خرابی پیدا ہوتی ہے اور اگر انہیں شدید بھوک کی حالت میں کیا جائے تو حالت مزید خراب کر دیتے ہیں۔

خالی پیٹ چائے اور کافی

G:\Pics Sharing\جج.jpg

یہ دونوں مشروب کفین کی وجہ سے اعصاب کو بیدار کر دینے کی صلاحیت رکھتے ہیں اس لیے اکثر افراد انہیں صبح اُٹھتے ہی استعمال کرتے ہیں لیکن طبعی ماہرین کا کہنا ہے کہ کیفین والے یہ ڈرنکس صبح نہار منہ پینے سے معدے میں تیزابیت جیسے مسائل پیدا ہوتے ہیں جو سارا دن خوراک کے اچھی طرح ہضم ہونے کی راہ میں رکاوٹ پیدا کرتے ہیں اور قوت مدافعت کو نقصان پہنچاتے ہیں۔

خالی پیٹ بحث کرنا

ماہرین کا کہنا ہے کہ خالی پیٹ بحث تکرار میں مت پڑیں کیونکہ خالی پیٹ انسان کے خون میں شوگر کا لیول کم ہوتا ہے اور ایسی صورت میں وہ چڑچڑا اور جلدی تلخ ہو جاتا ہے، اور ایسے موقع پر اُس کا بحث و تکرار میں پڑنا سنگین لڑائی اور جھگڑے کا باعث بن سکتا ہے اس لیے اگر بحث کرنا ضروری ہو تو پہلے پیٹ پُوجا کرلیں تاکہ آپ دماغ کو تحمل سے کنٹرول کر سکیں۔

شاپنگ کرنا

Robot with shopping cart

یہ بات آپ کو عجیب لگ سکتی ہے لیکن ماہرین نفسیات کا کہنا ہے کہ خالی پیٹ خریداری کے لیے مت جائیں کیونکہ اس سے آپ کے غیر ضروری اشیاء کے خریدنے کے امکانات بڑھ جاتے ہیں اور ایسے موقع پر آپ ہائی کیلوریز اور ٹرانس فیٹ سے بھرپور جنک اور فاسٹ فوڈ خریدنے کی طرف راغب ہو سکتے ہیں اور یہ دونوں چیزیں آپ کی صحت کے لیے مفید نہیں ہیں۔

نہار منہ چیونگم

C:\Users\Zubair\Downloads\chewing-gum-1359235_1920.jpg

خالی پیٹ چیونگم کھانا بھی نظام ہضم کو متاثر کرنے کا باعث بنتا ہے کیونکہ جب آپ چیونگم چباتے ہیں تو آپ کا دماغ جسم کو ایسے سگنلز بھیجتا ہے جس سے کھانے کو ہضم کرنے والی تیزابیت پیدا ہوتی ہے اور چیونگم کھانے سے جب پیٹ میں کوئی کھانا داخل نہیں ہوتا تو یہ تیزابیت نظام ہضم پر بوجھ بن کر اسے خراب کرنے کا باعث بنتی ہے اور معدے میں السر جیسے مرض کو پیدا کرنے کا سبب بن سکتی ہے۔

الکوحل

اس میں اگرچہ صحت کے لیے کُچھ فائدے بھی ہیں لیکن اسکے نقصانات اس کے فائدوں پر بھاری ہیں اور اسی لیے اللہ رب العزت نے اس مشروب کو پینے سے منع فرمایا ہے لیکن پھر بھی انسان کوتاہی کر بیٹھتا ہے اور جب اُسے اس کی لت لگ جاتی ہے تو پھر وہ اسے چھوڑ نہیں پاتا۔ ماہرین طب کا کہنا ہے کہ شدید بھوک اور نہار مُنہ ہونے کی حالت میں اس مشروب کا استعمال صحت کو شدید نقصان پہنچا سکتا ہے کیونکہ یہ فوراً خون میں شامل ہوگی اور اس سے خون لیجانے والی شریانوں کے پھیل جانے کا خطرہ بڑھ جائے گا اور ساتھ ہی یہ گُردوں، پھیپھڑوں اور دماغ کو بھی نقصان پہنچائے گی۔ لیکن اگر پیٹ میں کُچھ کھانا موجود ہو تو وہ الکحل کے خون میں شامل ہونے کی رفتار کو سُست کر دیتا ہے اور اس کے نقصانات میں تھوڑی سی کمی لے آتا ہے۔