ورزش اور خوراک پر دھیان دینے کے باوجود موٹاپا ختم نہ ہونے کی 9 بنیادی وجوہات

Posted by

بہت سے لوگ اکثر شکوہ کرتے نظر آتے ہیں کہ وہ ورزش بھی کر رہے ہیں اور خوراک پر بھی دھیان دے رہے ہیں لیکن اس کے باوجود اُن کا وزن کم نہیں ہو رہا۔ اس آرٹیکل میں اُن وجوہات کا ذکر کیا جائے گا جن کی وجہ سے ورزش کے باوجود چربی پگھل نہیں رہی اور موٹاپا بدستور قائم ہے۔

نمبر 1 کھانا کھاتے ہی سو جانا

رات کے کھانے کے فوراً بعد بستر پر لیٹ جانا جہاں موٹاپے کی ایک بڑی وجہ ہے وہاں یہ اور کئی بیماریوں کو جنم دیتی ہے ماہرین کا کہنا ہے کے رات کے کھانے کے بعد کم از کم 1 ہزار قدم پیدل چلنا انتہائی ضروری ہے اور کھانا کھانے کے 2 گھنٹے بعد تک بستر پر نہیں جانا چاہیے۔

نمبر 2 ذہنی تناؤ

اگر آپ ذہنی تناؤ کا شکار ہیں تو یہ تناؤ آپ کو پتلا نہیں ہونے دے گا کیونکہ ماہرین کے نزدیک ذہنی تناؤ سے جسم میں چربی جمنا شروع ہو جاتی ہے اور اضافی چربی پگھلتی نہیں ہے اس لیے ذہنی تناؤ کو کم کرنے کے لیے یوگا ورزش کو اپنی روٹین میں شامل کریں۔

نمبر 3 جنس

آپ مرد ہیں یا خاتون آپ کی جنس آپ کے وزن کم کرنے کی محنت پر اثر انداز ہو سکتی ہے ایک تحقیق کے مُطابق مردوں کے لیے وزن کم کرنا خواتین کی نسبت زیادہ آسان ہے اور وہ ورزش کے کُچھ دنوں کے بعد ہی اُنہیں نتائج نظر آنا شروع ہو جاتے ہیں لیکن خواتین کو وزن کم کرنے کے لیے زیادہ لمبے عرصے تک محنت کرنی پڑتی ہے خاص طور پیٹ کی چربی کم کرنے کے لیے عورتوں کو مردوں کی نسبت زیادہ عرصہ درکار ہوتا ہے۔

نمبر 4 میٹابولیزم

جسم کے اندر ہونے والے کیمیائی ردعمل میٹابولیزم کہلاتے ہیں اگر جسم کا میٹابولیزم تیز ہوگا تو یہ خوراک کو جلدی توانائی میں بدل دے گا اور ورزش کے دوران آپ زیادہ کیلوریز برن کر سکیں گے اور اگر میٹابولیزم سُست ہے تو آپ کو ورزش میں شروع کے عرصے میں نتائج نظر نہیں آئیں گے لیکن اگر آپ اپنی خوراک اور ورزش پر توجہ دیتے رہیں گے تو آہستہ آہستہ میٹابولیزم ٹھیک ہو جائے گا۔

میٹابولیزم عُمر کے بڑھنے کے ساتھ بھی سُست ہوتا ہے اور ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ 10 سال میں دو فیصد سے لیکر 8 فیصد تک سُست ہو جاتا ہے اور اس کی وجہ مسلز ماس میں کمی ہونا ہے۔

نمبر 5 بہت کم کھانا

اگر آپ بہت ہی کم کھانا کھا رہے ہیں یا ناشتہ یا لنچ وغیرہ چھوڑ دیتے ہیں اور بہت کم کیلوریز استعمال کر رہے ہیں تو اس سے بھی آپ کے جسم میں کیلوریز برن کرنے کا سلسلہ سُست ہو جاتا ہے اور آپ کا جسم موٹا ہونا شروع ہو جاتا ہے اس لیے روزانہ مناسب مقدار میں غذائیت والا کھانا بہت ضروری ہے۔

نمبر 6 نیند کی کمی

اگر آپ نیند کی کمی کا شکار ہیں تو اس سے بھی آپ کا میٹابولیزم کمزور ہوجاتا ہے اورجسم میں کیلوریز برن کرنے کی صلاحیت ماند پڑجاتی ہے اور بے نیندی سے موٹاپے جیسے امراض پیدا ہوتے ہیں اس لیے روزانہ کی بُنیاد پر مناسب نیند لیں اور اپنے وقت پر سوئیں اور وقت پر جاگیں۔

نمبر 7 آپ کے جینز

کُچھ لوگ بہت کم ورزش کر کے جلدی چربی پگھلا لیتے ہیں اور کُچھ لوگوں کو اس کام کے لیے بہت زیادہ محنت کرنی پڑتی ہے اور اس بات کا انحصار آپ کے جینز جو آپ کو ماں باپ سے ملتے ہیں پر بھی ہوتا ہے یہاں یہ بات یاد رکھیں کہ آپ جینز تبدیل نہیں کر سکتے لیکن مسلسل محنت کو زندگی میں شامل کر کے اپنے مقصد کو حاصل ضرور کر سکتے ہیں۔

نمبر 8 تھائی رائیڈ گلائینڈ

اگر آپ کا تھائی رائیڈ گلائینڈ ٹھیک کام نہیں کر رہا اور آپ ہائیپوتھائیریزم کا شکار ہیں تو اس سے بھی موٹاپا پیدا ہوتا ہے کیونکہ اس بیماری سے جسم میں نمک اور پانی اکھٹا ہونا شروع ہو جاتا ہے۔

اس بیماری سے بہت زیادہ بھوک لگتی ہے اور کھانا کھانے کے فوراً بعد پھر بھوک لگ جاتی ہے جس سے زیادہ کیلوریز استعمال ہوتی ہیں اور انسان موٹاپے کا شکار ہو جاتا ہے اس لیے اپنے ڈاکٹر سے رابطہ کریں اور تھائی رائیڈ گلائینڈ کو چیک کروائیں تاکہ اصل وجہ کا پتہ چل سکے۔

نمبر 9 جسمانی صحت

جسمانی صحت کا وزن کم کرنے میں اہم کردار ہے اگر آپ کی صحت اچھی ہے تو آپ مناسب ورزش سے فوراً فالتو چربی پگھلا لیتے ہیں لیکن اگر صحت خراب ہے جیسے اگر دل کی کوئی بیماری ہے، کھانے پینے کے اوقات کی خرابی ہے یا نیند کی کوئی بیماری ہے تو وزن کم کرنا مشکل ہو جاتا ہے۔

کُچھ ایلوپیتھی ادویات کا استعمال خاص طور پر بلڈ پریشر کنٹرول کروانے والی ادویات، برتھ کنٹرول، شوگر کی ادویات، ڈپریشن اور الرجی کو کنٹرول کرنے والی ادویات کا استعمال کرنے والے بھی جلدی وزن کم نہیں کر پاتے اور سمجھتے ہیں کہ ورزش اور خوراک میں تبدیلی سے کُچھ نہیں ہوتا لیکن اگر وہ مستقل مزاجی سے اپنے مقصد پر کاربند رہیں تو اُن کو بھی نتائج ملنا شروع ہو جاتے ہیں۔