پاکستان کی 10 مشہور شخصیات جو کرونا وائرس کا شکار ہُوئیں

Posted by

کرونا وائرس موجودہ صدی کا اب تک کا سب سے خطرناک وبائی مرض ہے جس کا میڈیکل سائنس میں اب تک کوئی علاج موجود نہیں اور یہ وبائی مرض آہستہ آہستہ خاص و عام کی پروا کیے بغیر دُنیا کو اپنی لپیٹ میں لے رہا ہے اور کئی مشہور ترین شخصیات اس وائرس کا شکار ہو چُکی ہیں جن میں شہزادہ چارلس، ٹام ہینکس، ریتا ویلسن، بوریس جانسن، روڈی گوبرٹ جیسے بڑے نام شامل ہیں۔

اس آرٹیکل میں ہم پاکستان کی اُن 10 مشہور شخصیات کو شامل کریں گے جو اس وائرس کا شکار ہو چُکی ہیں ان میں کُچھ اللہ کے فضل سے شفا یاب ہو چُکے ہیں اور باقی ابھی قرنطینہ میں زیر علاج ہیں اور دو اس بیماری سے جان کی بازی ہار چُکے ہیں۔

نمبر 1 سیلمان احمد

سیلمان احمد پاکستان کے مشہور میوزیشن، ادکار اور سینگر ہیں اور یونائیٹڈ نیشن میں بطور ایمبیسڈر کام کر چُکے ہیں اور ان دنوں امریکہ میں قیام پزیر ہیں جہاں نزلہ زکام کی شکایت پر اُنہوں نے ڈاکٹر کے کہنے پر کرونا ٹیسٹ کروایا جو پازیٹیو نکلا چنانچہ قرنطینہ میں گئے اور کُچھ دن میں اللہ نے اُنہیں صحتیاب کر دیا۔

نمبر 2 سعید غنی

سعید غنی سیاست دان ہیں اور سندھ کے صوبائی وزیر ہیں، سعید غنی پر کورنا وائرس کے کوئی اثرات ظاہر نہیں ہُوئے تھے اور آپ نے احتیاطً کرونا کا ٹیسٹ کروایا تو پتہ چلا کے ٹیسٹ پازیٹو ہے، وائرس بازیٹو ہونے کے بعد سعید غنی نے اپنے گھر میں ہی قرنطینہ اختیار کیا، خوش قسمتی سے اس دوران سعید غنی پر وائرس کی کوئی علامات ظاہر نہیں ہُوئیں اور 2 ہفتے کے بعد خُودبخود ٹھیک ہوگئے اور ٹیسٹ نگیٹیو ہو گیا۔

نمبر 3 فیصل ایدھی

فیصل ایدھی عبدالستار ایدھی کے بیٹے ہیں اور سوشل ورکر ہیں ایدھی صاحب کے انتقال کے بعد ایدھی فاونڈیشن کو چلا رہے ہیں ، فیصل ایدھی صاحب نے بھی کرونا کی علامات کو محسوس کر کے ٹیسٹ کروایا جو پازیٹو نکلا اور پھر قرنطینہ چلے گئے جہاں کُچھ ہی دنوں میں مکمل صحتیاب ہو گئے۔

نمبر 4 عمران اسماعیل

گورنر سندھ عمران اسماعیل بھی کرونا وائرس کا شکار ہُوئے اور کافی دن قرنطینہ میں رہے جہاں اُن کا کئی بار ٹیسٹ کیا گیا جو پازیٹو رہا لیکن دو دن پہلے اللہ نے انہیں بھی صحتیاب کر دیا ۔

نمبر 5 اسد قیصر

اسد قیصر پاکستان کے قومی اسمبلی کے سپیکر ہیں اور کُچھ روز قبل کرونا وائرس کا شکار ہُوئے ہیں اور اس وقت قرنطینہ میں ہیں جہاں خبروں کے مُطابق اُن کی صحت ٹھیک نہیں ہے اس لیے دُعا ہے کہ اللہ انہیں بھی جلد صحتیاب کرے۔

نمبر 6 ڈاکٹر عبدالقادر سومرو

ڈاکٹر سومروجلد کے امراض کے سپیشلسٹ اور سابقہ چیف میڈیکل آفیسر سٹیل مل تھے اور کرونا وائرس کے خلاف اگلے مورچے پر لڑائی لڑ رہے تھے جہاں اس مہلک وائرس کا شکار ہُوئے اور پھر اس جان لیوا وائرس نے ڈاکٹر صاحب کو صحتیاب ہونے کا موقع نہیں دیا اور ان کے نظام تنفس کو بُری طرح متاثر کر دیا، ڈاکٹرز نے ڈاکٹر سومرو کو وینٹی لیٹر پر منتقل کیا مگر ڈاکٹر صاحب جانبر نہ ہو سکے۔

نمبر 7 اعظم خان

سکوائش کے کھیل کے بے تاج بادشاہ اورچار دفعہ برٹش اوپن جیتنے کا اعزاز حاصل کرنے والے اعظم خان لندن میں 95 سال کی عُمر میں اس وائرس کا شکار ہُوئے اور تقریباً ایک ہفتہ تک اس مہلک بیماری میں مبتلا رہنے کے بعد جان کی بازی ہار گئے۔

نمبر 8 ظہور بُلیدی

بلوچستان کے وزیر خزانہ ظہور بُلیدی بھی پچھلے کُچھ دن سے کرونا کی علامات محسوس کر رہے تھے اور 13 مئی کو اُنہوں نے بھی اپنا ٹیسٹ کروایا جو پازیٹو نکلا ہے۔ ظہور بُلیدی اس وقت اپنے گھر میں ہی قرنطینہ اختیار کیے ہُوئے ہیں اور بلوچستان کے پہلے وزیر ہیں جو اس بیماری میں مُبتلا ہُوئے ہیں دُعا ہے کہ اللہ انہیں بھی جلد صحتیاب کرے۔

نمبر 9 سردار دوست مزاری

پنجاب اسمبلی کے ڈپٹی سپیکر جناب سردار دوست مزاری بھی 28 اپریل کو دوبئی سے واپسی پر کرونا ٹیسٹ مثبت آنے کے بعد سے قرنطینہ میں ہیں ۔

نمبر 10 محمود بنگش

خیبر پختونخواہ چیف منسٹر کے سپیشل اسسٹنٹ محمود بنگش بھی کرونا وائرس کا شکار ہیں اور اس وقت قرنطینہ میں ہیں۔

Feature Image preview Credit : Bollywood Hungama / CC BY and Fars News Agency / CC BY, these images were edited.