پاکستان کے 84 فیصد سے زیادہ لوگ وٹامن ڈی کی کمی کا شکار ہیں

Posted by

صحت کے حوالے سے دُنیا کے 190 ممالک میں پاکستان کا نمبر ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے سروے کے مطابق 122 واں ہے اور اتنے بڑے ایگریکلچر مُلک میں صحت کا اتنا قُقدان ایک تشویشناک بات ہے، ہمارے ملک میں عام طور پر لوگ جسم کے لیے ضروری غذائی اجزا خوراک کے ذریعے حاصل نہیں کر پاتے اور پھر ان اجزا کی کمی اُنہیں کمزور کر کے کئی بیماریوں میں مبتلا کر دیتی ہے۔

پاکستانی لوگوں میں غذائی اجزا کی کمی کا اندازا اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ صحت کے لیے انتہائی ضروری مگر سستا ترین وٹامن ڈی جو پاکستان میں سُورج کی روشنی تیز ہونے کے باعث سُورج سے آسانی سے حاصل کیا جا سکتا ہے مگر پھر بھی 84 فیصد سے زیادہ لوگ اس وٹامن کی کمی کا شکار ہیں۔

وٹامن ڈی کی کمی کا کیسے پتہ چلایا جائے

جسم میں وٹامن ڈی کی کمی مختلف طریقے سے ظاہر ہوتی ہے اور اگر وقت پر اس کمی کو پہچان کر دُور کردیا جائے تو بڑی مُشکل سے بچا جا سکتا ہے۔

جلد بیمار ہونا اورموسمی بیماریوں کا جلد شکار ہونا

وٹامن ڈی ہمارے نظام مدافعت کو فعال رکھنے میں اہم کردار ادا کرتا ہے اور اس کی کمی نظام مدافعت کو کمزور بنا کر جسم میں وائرل بیماریوں کا داخل ہونا آسان بنا دیتی ہے چنانچہ اس کی کمی کی وجہ سے جسم جلد انفیکشن کا شکار ہو کر بیمار رہنا شروع کر دیتا ہے۔

تھکاوٹ اور سستی

تھکاوٹ اور سستی کی کئی وجوہات ہو سکتی ہیں اور ان میں سے ایک وجہ جسم میں وٹامن ڈی کی کمی ہے۔

ہڈیوں اور کمر کی درد

File:Lower back pain.jpg
Injurymap / CC BY

وٹامن ڈی ہڈیوں کو کئی طریقوں سے فائدہ پہنچاتا ہے اور یہ جسم میں کیلشیم کو جذب کرنے کی صلاحیت کو بڑھاتا ہے اور ہڈیوں اور کمر کی درد خون میں وٹامن ڈی کی کمی کی ایک وجہ ہوسکتی ہے۔

ڈپریشن

File:Depressed (4649749639).jpg
Sander van der Wel from Netherlands / CC BY-SA

مُوڈ کا اکثر خراب ہونا بھی وٹامن ڈی کی کمی کی ایک نشانی ہوسکتا ہے اور ایک تحقیق کے نتائج کے مُطابق ڈپریشن میں مُبتلا 65 فیصد افراد میں وٹامن ڈی کی کمی پائی گئی۔

زخموں کا دیر سے بھرنا

ذیابطیس کی طرح وٹامن ڈی کی کمی میں بھی آپریشن وغیرہ کے بعد زخموں کے بھرنے کے عمل کو سسُت کر دیتی ہے۔

بالوں کا گرنا

C:\Users\Zubair\Downloads\hair-loss-4818761_1920.jpg
Resim Martin Slavoljubovski tarafından Pixabay‘a yüklendi

بالوں کا بلاوجہ گرنا جسم میں خوراک کی کمی کی واضح علامت ہے اور وٹامن ڈی کی کمی بالوں کی صحت پر اچھے اثرات مرتب نہیں کرتی۔

پٹھوں میں درد

پٹھوں کی درد کو وٹامن ڈی کی کمی سے منسوب کرنا ٹھیک نہیں کیونکہ اس درد کی کئی اور وجوہات بھی ہوسکتی ہیں مگر وٹامن ڈی کی کمی بھی پٹھوں میں درد کا باعث بنتی ہے۔

سر میں پسینہ

ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ نشانی وٹامن ڈی کی کمی کی ایک اہم نشانی ہے اور اس پر توجہ دینا انتہائی ضروری ہے۔

موٹاپا

موٹاپا کئی بیماریوں کی ماں ہے اور اس کے پیدا ہونے کی ایک بڑی وجہ وٹامن ڈی کی کمی ہے کیونکہ وٹامن ڈی جسم میں چربی کو پگھلاتا ہے اور جمنےسے روکتا ہے اور اس کی کمی سے جسم موٹا ہونا شروع ہو جاتا ہے۔

وٹامن ڈی کی کمی کیسے پُوری کی جائے

C:\Users\Zubair\Downloads\beach-sea-grass-abstract-wine-white-819863-pxhere.com.jpg

وٹامن ڈی کی کمی کے لیے خُون کے نمونوں کو ٹیسٹ کیا جاتا ہے اور اگر ان میں وٹامن ڈی کی کمی پائی جائے تو ڈاکٹر حضرات عام طور پر وٹامن ڈی کے سپلیمنٹ استعمال کرواتے ہیں مگر آپ یہ کمی روزانہ کم از کم 15 سے 20 منٹ سُورج کی روشنی میں بیٹھ کر بھی پُوری کر سکتے ہیں اور اس کے ساتھ ساتھ مچھلی کا گوشت،فش آئل، اُبلا ہُوا انڈہ، دُودھ، دہی، کینو، مشرومز، بادام کا دُودھ اور تازہ پھلوں اور سبزیوں کو اپنی روزانہ کی خوراک میں شامل کر کے بھی پُوری کر سکتے ہیں۔