پیاز کاٹ کر جرابوں میں رکھنے کا دلچسپ اور عجیب ٹوٹکا

Posted by

پیاز کو جرابوں میں رکھ کر سونا ایک عجیب بات ہے مگر لوک داستانوں پر یقین رکھنے والے اور قدیم طب کے کئی ماہرین جرابوں میں پیاز رکھ کر سونے کے متعلق انتہائی یقین سے کہتے ہیں کہ یہ اینفکیشنز جیسے نزلہ، زُکام اور بُخار وغیرہ کو ٹھیک کر ایک ہی رات میں ٹھیک کر دیتا ہے اور یہ لوک داستانی نُسخہ کُچھ یُوں ہے کے سُرخ یا سفید پیاز کو چھیل کراسے گول گول کاٹ لیں پھر اسے اپنے پاؤں کے نیچے رکھ کر اوپر سے جرابیں پہن لیں اور سو جائیں اور جب صبح اُٹھیں گے تو آپ کی بیماری ختم ہو چُکی ہو گی۔

اس نُسخے کی تاریخ

امریکہ کی نیشنل پیاز ایسوسی ایشن کے مُطابق یہ ٹوٹکا پندرویں صدی میں طاعون کی بیماری پھیلنے سے شروع ہُوا جب لوگوں کی بڑی تعداد اس بات پر یقین کرنے لگی کے پیاز کو کاٹ کر گھر کے مختلف حصوں میں رکھ دینے سے گھر طاعون کے جراثیموں سے محفوط ہوجاتا ہے، اُس دور کے لوگوں کا ماننا تھا کہ انفیکشن بدبو کے نقصان دہ بُخارات، زہریلی اور آلودہ ہوا کی وجہ سے پھیلتی ہے مگر بعد میں جرم تھیوری کے آنے کے بعد یہ تھیوری بدل دی گئی۔

پیاز کو جرابوں میں رکھنا قدیم چین کے طب کے ماہرین کے نزدیک بھی فائدہ مند ہے خاص طور پر آکو پریشر اور آکو پنکچر کے طریقہ علاج سے علاج کرنے والے جو پاؤں کی مختلف رگوں پر پریشر ڈال کر اور مالش کر کے بہت سی بیماریوں کامیاب علاج کرنے کا دعوی کرتے ہیں اور اُن کا ماننا ہے کہ جسم کے اندرونی اعضا کا پاؤں کے ساتھ رابطہ ہے۔

پیاز میں چونکہ سلفوریک کمپاونڈ کی بڑی مقدار شامل ہوتی ہے اور اسی وجہ سے پیاز سے ایک خاص قسم کی بُو بھی آتی ہے اور اس نُسخے کے ماننے والوں کا کہنا ہے کہ پیاز کو جب پاؤں میں رکھ کر اوپر سے جرابیں پہن لی جاتی ہیں تو یہ سلفوریک ایسڈ پاؤں کے مسام کے راستے جسم میں داخل ہوتا ہے اور بیکٹریا اور وائرس وغیرہ کو مار کر خون کو صاف کرنے کا باعث بنتا ہے اور اسی طرح جب پیاز کاٹ کر کمرے میں رکھ دیا جاتا ہے تو ہوا سے نقصان پہنچانے والے جراثیموں کا خاتمہ کر دیتا ہے۔

جدید تحقیق اس بارے کیا کہتی ہے

چین کے قدیم طریقہ علاج جس میں پاؤں کی مالش اور رگیں وغیرہ دبا کر علاج کیا جاتا ہے پر کئی تحقیقات کی گئیں اور کُچھ تحقیقات کے نتائج کے مطابق اس سے واقعی ہی کُچھ بیماریوں میں فائدہ حاصل ہوتا ہے خاص طور پر ذہنی اور جسمانی تناؤ میں کمی آتی ہے اور کُچھ تحقیقات کے مُطابق یہ انفیکشن کو ٹھیک کرنے کی بجائے زیادہ خراب کرنے کا باعث بھی بن سکتا ہے مگر پاؤں میں جرابیں رکھنے سے انفیکشن ختم ہوتی ہے اس پر ابھی تک کوئی سائنسی تحقیق نہیں کی گئی۔

انٹرنیٹ اور سوشل میڈیا پر پیاز کو جرابوں میں رکھ کر سونے کے بہت سے فوائد بتائے جاتے ہیں مگر ان آرٹیکلز میں کسی کے پاس بھی اس ٹوٹکے کے متعلق کوئی ٹھوس ثبوت نہیں ہیں جس سے ثابت ہو سکے کہ یہ واقعی ہی کارآمد ہے مگر چونکہ پیاز میں اینٹی بیکٹریل خوبیاں پائی جاتی ہیں اس لیے کُچھ ماہرین کا کہنا ہے کے اسے پاؤں پر ملنے سے جراثیم ختم ضرور ہوتے ہیں۔

کیا پیاز جرابوں میں رکھنا خطرناک ہے؟

اگر آپ کو نزلہ، زُکام یا بُخار وغیرہ کی اینفکیشن ہو رہی ہے اور آپ اس ٹوٹکے کو استعمال کرنا چاہتے ہیں تو بے فکر ہو کر استعمال کریں کیونکہ ماہرین کے نزدیک اس سے صحت کو کوئی نقصان نہیں ہوتا اور اگر آپ اس ٹوٹکے سے ٹھیک ہو جاتے ہیں تو اپنے تجربات ہمارے ساتھ بھی بانٹیں تاکہ اندازہ لگایا جا سکے کے یہ قدیم لوک داستانی نُسخہ واقعی کام کرتا ہے یا نہیں۔