چلغوزے کے 9 زبردست فائدے جنہیں جانکر یہ آپکو مہنگا نہیں لگے گا

Posted by

کُچھ سال پہلے تک چلغوزہ اتنا مہنگا نہیں تھا اور یہ بازار میں 8 سو سے ہزار روپئے کلو مل جاتا تھا لیکن پچھلے چند سالوں میں اس خشک میوے کی ڈیمانڈ یورپ اور امریکہ میں بڑھنی شروع ہُوئی اور اُسکی وجہ سائنس کی اس میوے کے متعلق دلچسپ تحقیقات تھیں جن میں اس آسمانی تحفے کے صحت پر پڑنے والے بیشمار اچھے اثرات کا مشاہدہ کیا گیا اور اس ڈرائی نٹ کے صحت کے لیے انتہائی مُفید پایا گیا۔

G:\Pics Sharing\IMG_2180.JPG

اس ارٹیکل میں چلغوزے کے 10 ایسے فائدے شامل کیے جا رہے ہیں جنہیں میڈیکل سائنس کی تحقیقات تسلیم کرتی ہیں اور گو کے یہ میوہ مہنگا ہے مگر صحت سے زیادہ نہیں۔

نمبر 1 چلغوزے کی غذائی صلاحیت

چلغوزے کا شُمار ہائی کیلوریز والے کھانوں میں ہوتا ہے کیونکہ صرف 100 گرام چھلے ہُوئے چلغوزے میں 673 کیلوریز ہوتی ہیں اور اسکے ساتھ 13.8 گرام کاربوہائیڈریٹس، 13.69 گرام پروٹین، 68.37 گرام چکنائی، 0 کولیسٹرال اور فائبر 3.7 گرام کیساتھ صحت کے لیے مُفید پائیتھو کیمیکلز، وٹامنز، منرلزاور اینٹی آکسائیڈینٹس پائے جاتے ہیں جو ہماری صحت پر بیشمار اچھے اثرات مرتب کرتے ہیں۔

نمبر 2 دل اور کولیسٹرال

اس میوے میں شامل ہائی کیلوریز اس میں موجود مونوسیچوریٹڈ فیٹ کی بڑی مقدار کی وجہ سے ہے، چلغوزے میں خاص طور پر اولیک ایسڈ پایا جاتا ہے جو جسم میں موجود بُرے کولیسٹرال کو کم کرتا ہے اور ایچ ڈی ایل یعنی اچھے کولیسٹرال کا اضافہ کرتا ہے اور اگر اس میوے کو اپنی روزانہ کی خوراک میں شامل کر لیا جائے تو اس میں موجود اینٹی آکسائیڈینٹس، وٹامنز اور منرلز دل کی بیماریوں کے پیدا ہونے کے خدشات کو کم کردیتے ہیں۔

نمبر 3 منرلز سے بھرپُور ہوتے ہیں

چلغوزے ہمارے جسم کے ہارمونز کی صحت کے لیے انتہائی مُفید ہیں کیونکہ اس میں زنک کی ایک بڑی مقدار شامل ہوتی ہے اور یہ منرل ہماری صحت پر کئی اور اچھے اثرات مرتب کرتا ہے۔

اس ڈرائی فروٹ میں میگنیشیم کی بھی کافی مقدار شامل ہے اور یہ منرل مُوڈ منرل بھی کہلاتا ہے اور اس منرل کا استعمال اینگزائٹی، سٹریس اور ڈیپریشن جیسی بیماریوں میں مُوڈ کو بہتر بنانے میں اہم کردار ادا کرتا ہے۔

چلغوزے میں شامل منرلز ہمارے جسم کو پُرسکون کرتے ہیں اور نیند اور یاداشت کو بہتر بناتے ہیں اس لیے اگر ان کی ایک مُٹھی بطور سنیک اپنے بیگ میں روزانہ رکھ لی جائے تو یہ ہماری صحت کو 4 چاند لگا دئیں گے۔

نمبر 4 خُون پیدا کرتے ہیں

آئرن سے بھرپُور ہونے کی وجہ سے چلغوزہ خون کی کمی والے افراد کے لیے ایک بہترین غذا ہے یہ خُون کے سُرخ ذرات میں اضافہ کرتا ہے اور یہ ذرات سارے جسم کو آکسیجن مہیا کرنے کے ذمہ دار ہیں اور جب جسم کے اندرونی اعضا کو مناسب آکسیجن ملتی ہے تو اُن کے کام کرنے کی صلاحیت بڑھ جاتی ہے۔

نمبر 5 شوگر کے لیے انتہائی مُفید ہیں

چلغوزے میں شامل ان سیچوریٹڈ فیٹ یعنی صحت کے لیے مُفید چکنائی جسم میں انسولین Sensitivity میں اضافہ کرتی ہے اور جب اسے دُوسری خوراک کے ساتھ کھایا جاتا ہے تو یہ کھانے کا گلیسمیک انڈیکس کم کرتا ہے یعنی کھانے کی شوگر کو خُون میں تیزی سے شامل ہونے سے روکتا ہے اور یہ ذیابطیس کے مریضوں کے لیے ایک اچھی خبر ہے۔

نمبر 6 وزن کم کرنے میں مدد کرتے ہیں

اگر آپ بڑھا ہُوا وزن کم کرنا چاہتے ہیں تو چلغوزہ آپ کے لیے بہترین غذا ہے کیونکہ اس میں شامل پینولینک ایسڈ ایسے ہارمونز کو پیدا ہونے میں مدد کرتا ہے جو دماغ کو پیٹ بھرا ہونے کا سگنل بھیجتے ہیں اور بے وقت کی بھوک سے بچاتے ہیں۔

نمبر 7 بُوڑھا نہیں ہونے دیتے

غذائی صلاحیتوں سے بھر پُور اس میوے میں شامل صحت کے لیے مُفید چکنائی، ڈائٹری فائبر، پلانٹ سٹیرولز، اینٹی آکسائیڈینٹس، وٹامنز اور منرلز ہمارے جسم پر عُمر کے برھنے کے اثرات کو سُست کرنے میں انتہائی مُفید ہے اور اس کو روزانہ کھانے سے آپ سمارٹ اور نوجوان دیکھائی دینا شروع ہو جاتے ہیں۔

نمبر 8 بینائی تیز کرتا ہے

اس میوے میں شامل وٹامن اے اور لوٹین کو اگر روزانہ استعمال کیا جائے تو یہ آنکھوں کی بینائی کو تیز اور توانا کر دیتے ہیں اور آنکھوں پر عُمر کے اثرات کو پڑنے سے روکتے ہیں۔

نمبر 9 قوت مدافعت پیدا کرتے ہیں

دوسرے خُشک میوہ جات کی طرح چلغوزے میں بھی وٹامن ای کی ایک بڑی مقدار شامل ہوتی ہے اور یہ وٹامن ایک طاقتور لیپڈ سلوبل اینٹی آکسائیڈینٹ ہے جو قوت مدافعت کو توانا کرتا ہے اور جسم کو فری ریڈیکلز کے حملے سے بچاتا ہے اور یہ فری ریڈیکلز کینسر جیسی بیماریوں کا باعث بنتے ہیں۔