گھیا کدو اور لوکی کے روحانی اور جسمانی فوائد

Posted by

گرمی ہو یا سردی کدو اور لوکی ہماری صحت کے لیے انتہائی مُفید کھانا ہے جسے شروع میں عرب، ایران اور ہندوستان کے مختلف علاقوں میں کاشت کیا جاتا تھا پھر اس سبزی کی افادیت کو دیکھتے ہُوئے اسے ساری دُنیا میں ہی کاشت کیا جانے لگا، اس آرٹیکل میں اس مُفید سبزی کے روحانی اور جسمانی فوائد کو شامل کیا جارہا ہے تاکہ آپ بھی اس کے زبردست سبزی کو اس موسم گرما میں اپنی خواراک میں شامل کریں اور اس کے فوائد سے بہرہ مند ہوں ۔

اسلام میں کدو کی فضیلت

کدو حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کو بے حد پسند تھا۔ انس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کدو پسند فرماتے تھےسنن ابی ماجہ ، حدیث نمبر : 3302۔ ایک اور حدیث میں حضرت عا ئشہؓ سے روایت ہے کہ حضورؐ کدو کے موسم میں کدو کی ترکاری کھانے میں بے حد پسند فرماتے تھے۔ ایک اور موقع پر حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا اے عائشہ! جب تم ہانڈی پکاؤ تو اس میں کدو کثرت سے ڈالا کرو کیونکہ وہ پریشان دل کو سکون دیتا ہے۔ سلسلہ الاحادیث الضعیفہ : 6935۔

کدو طبی محققین کی نظر میں

چوتھی صدی ہجری کے طبی محققین جن میں بوعلی سینا ،موسی بن خالد اور حسین بن اسحق کا نام سر فہرست ہے۔ ان

ما ہرین نے کدو کی افادیت کے بارے میں کہا کہ” ہم حیران ہیں کہ اس سبزی کے اتنے زیادہ فائدے ہیں”۔ کدو کا سالن بہت سی بیماریوں میں قوت بخش ثابت ہوتا ہے مثال کے طور پر اعصابی بیماریوں کے شکار افراد کے لیے نادر شے ہے۔

کدو کے چھلکے کے فوائد

طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ کدو کے چھلکے کو خشک کر لیں اور پھر اسے جلا کر راکھ بنا لیں۔ یہ راکھ زخم سے نکلنے والے خون کوحیران کن طور پر فوری روکتا ہے۔ موسم گرما کی آمد آمد ہے اس موسم میں اکثر چھوٹے بچوں کی آنکھیں دکھنے لگتی ہیں ، انکو بخار چڑھ جاتا ہے اور ان کی طبیعت میں چڑ چڑا پن آجاتا ہے ۔ ان حالات سے بچنے کے لیے کدو کا چھلکا بچوں کے تالو پر گدی بنا کر رکھیں ۔ چند دن یہ عمل کرنے سے بچے گرمی کے موسم میں ہونے والے ہر قسم کے وبائی امراض سے محفوظ رہیں گے۔

کدو کے جوس کی افادیت

کدو کا جوس پینے سے نہ صرف پیشاب کی جلن ختم ہوجاتی ہے بلکہ یہ آنتوں سے اور معدے سے تیزابیت اور انفیکشن بھی ختم کرتا ہے۔ بعض لوگوں کو گرمیوں میں نیند نہیں آتی اور ان کا سر چکراتا رہتا ہے۔ کدو کا جوس تلوں کے تیل میں ملا کر روزانہ رات کو سر پر مالش کرکے لگایا جائے تو گہری نیند آتی ہے۔

کدو کا جوس حاصل کرنے کا طریقہ

کدو کو کدو کش کرلینے کے بعد نچوڑ لیں۔ اس طریقے سے خاصی مقدار میں جوس حاصل ہوجاتا ہے جو معدہ کے لیے نعمت ہے۔

حکیم حضرات نےکدو کے استعمال سے بہت سی لاعلاج اور خطرناک بیماریوں کا علاج کیا ہے۔ یہاں چند بیماریوں کے نسخے دئیے گئے ہیں۔

سردرد

دنیا بھر میں سر درد کا عارضہ موجود ہے۔ اور اس کا شکار شخص کچھ بھی کرنے کے قابل نہیں رہتا۔ سر درد سے نجات حاصل کرنے کے لیے کدو کو گودا حسب منشا لے کر پیشانی پر لیپ کر دیں۔ انشاءاللہ سر درد تھوری دیر میں رفع ہو جائے گا۔

دانتوں کا درد

دانت کا درد کبھی بھی آپ کو اپنا شکار بناسکتا ہے اور یہ درد زندگی عذاب بنا دیتا ہے۔ کدو کا گُودا پانچ تولے لہسن ایک تولہ لیں او دونوں کو ملا کر ایک سیر پانی میں خوب پکائیں۔ جب پانی آدھا رہ جائے تو اس نیم گرم پانی سے کلیاں کریں۔ انشاء اللہ آنکھ جھپکتے دانتوں کا درد ختم ہو جائے گا۔

آنکھوں کی بیماریاں

انسانی جسم کا یہ نازک اور نہایت حساس عضو کسی حادثے کے نتیجے میں‌، ہماری غفلت یا بڑھتی ہوئی عمر کے ساتھ کمزور اور مختلف بیماریوں کا شکار ہوسکتا ہے۔ آنکھوں کی تمام قسم کی بیماریوں سے نجات حاصل کرنے کے لیے کدو کا چھلکا سائے میں خشک کر لیں۔ پھر اس خشک مادے کو جلا کرباریک پیس لیں۔ صبح و شام سرمے کے طور پر تین تین سلائی دونوں آنکھوں میں لگایا کریں انشاءاللہ چند روز کے استعمال سے آنکھوں کی بیشتر بیماریاں ختم ہوجائینگی۔

ہونٹوں کے امراض

خوبصورت ہونٹ انسان کی شخصیت کو پر کشش بناتے ہیں۔ ایسے میں اگر ہونٹ بیماری کا شکار ہو کر بد نما ہوجائیں تو انسان کی شخصیت کو گھٹا دیتے ہیں۔ ہونٹوں کے تمام امراض کے لیے مغز تخم کدو شیریں اور گوند کتیرا برابر وزن لے کر خوب باریک کرلیں اور رات کو سوتے سے پہلے ہونٹوں پر لیپ کرکے سوجائیں۔ پھر صبح گرم پانی سے صاف کردیں۔ انشاءاللہ چند دنوں میں ہونٹ خوبصورت ، نازک ملائم اورقدرتی طور پر سرخ ہو جائیں گے۔

یرقان سے نجات

ایک عدد کدو کو نرم آگ میں دبا کر بھرتا بنائیں اور اس کا پانی نچوڑ لیں۔ اس پانی میں تھوڑی سی مصری ملا کر پینے سے دل کی گرمی اور یرقان سے نجات ملتی ہے۔

Featured Image Preview Credit: Thamizhpparithi Maari, CC BY-SA 3.0, via Wikimedia Commons