4 سبز پودے جو شوگر کے مریضوں کے لیے باعث رحمت ہیں

Posted by

ذیابیطس کے مریض اپنی صحت برقرار رکھنے کے لیے بہت سی ادویات لیتے ہیں اور اسے کنٹرول کرنے کے لیے انسولین کا استعمال بھی کرتے ہیں۔ لیکن کیا آپ جانتے ہیں کہ بلڈ شوگر لیول کو قدرتی طریقوں سے بھی کنٹرول کیا جا سکتا ہے۔ شوگر کا مرض جنیاتی بھی ہو سکتا ہے اور خراب طرز زندگی اور نا مناسب خوراک بھی اس بیماری کے پیدا ہونے کی ایک وجہ ہے اس آرٹیکل میں ذیابطیس کو قدرتی طور پر نارمل رکھنے کے لیے چند ایسے زبردست پودے شامل کیے جا رہے ہیں جو شوگر کو حیرت انگیز طور پر کنٹرول کرنے میں انتہائی مدد گار ثابت ہوتے ہیں۔

سائنس دان ابھی تک ذیابیطس کا کوئی ٹھوس علاج تلاش کرنے میں کامیاب نہیں ہو سکے، البتہ صحت مند غذاؤں اور خوراک پر کنٹرول کے ساتھ ورزش ذریعے اچھی صحت کو برقرار رکھا جا سکتا ہے۔

نمبر 1 کڑھی پتے

File:Curry leaves fig2.jpg
Suchitra kumari, CC BY-SA 4.0, via Wikimedia Commons

کڑھی کے پتے عام طور پربرصغیر پاک و ہند میں پکنے والے کھانوں میں ذائقے کو بہتر بنانے اور خوشبو کے لیے استعمال ہوتے ہیں لیکن یہ پتے صحت کو بھی بہتر بناتے ہیں کیونکہ ان میں وٹامنز، منرلز، فائبر اور اینٹی آکسیڈنٹس پائے جاتے ہیں۔ اگر شوگر کے مریض اس سے فائدہ اٹھانا چاہتے ہیں تو وہ کری پتی کی چائے یا قہوہ بنا کر پی سکتے ہیں خاص طور پر کھانے کے بعد کری پتے کا قہوہ خوراک میں شامل گلوکوز کو خون میں تیزی سے شامل ہونے سے روکتا ہے اور شوگر کو نارمل رکھنے میں مددگار ثابت ہوتا ہے۔

نمبر 2 گیلوئے کے پتے

C:\Users\Zubair\Downloads\leaves-g03adb9f77_1920.jpg

گیلوئے یعنی Giloy کے پتے طب ایوردیک اور یونان میں کسی اکسیر سے کم نہیں مانے جاتے کیونکہ اس پودے میں قدرت نے ہمارے جسم کی قوت مدافعت کو مضبوط بنانے کی صلاحیت رکھی ہے اور اگر اس پودے کے پتوں کا نہار مُنہ استعمال شروع کر دیا جائے تو خون میں شوگر لیول کو نارمل رکھنے میں انتہائی مددگار ثابت ہو سکتے ہیں۔ آپ اس پودے کے 2 پتے صبح نہار منہ کھا سکتے ہیں اور ان کا قہوہ بنا کر بھی پی سکتے ہیں اور ان پتوں کا سفوف بھی استعمال کر سکتے ہیں۔

نمبر 3 نیم کے پتے

اہل علم نیم کی ادویاتی خوبیوں سے واقف ہے۔ یہ ایک ایسا پودا ہے جس کے پتے، پھل، پھول، چھال اور لکڑی سبھی دواؤں کے مقاصد کے لیے استعمال ہوتے ہیں۔ ماہرین صحت کے مطابق اگر آپ صبح اٹھ کر اس کے سبز پتے چبا لیں تو اس سے گلوکوز کی سطح کنٹرول میں رہے گی اور ذیابطیس کے مرض میں افاقہ ہوگا۔

نمبر 4 امرود کے پتے

C:\Users\Zubair\Downloads\PIXNIO-263919-2462x1641.jfif

قدرت نے بہت سے پودوں میں ذیابطیس کو کنٹرول کرنے کی خوبیاں رکھی ہیں اور ان پودوں میں امرود کے پتے بھی سر فہرست ہیں۔ امرود کے پتوں کا قہوہ کھانے کے بعد پینا شوگر کے مرض پر بلکل انسولین جیسا اثر پیدا کرتا ہے اور شوگر لیول کو 10 فیصد تک نیچے لیکر آتا ہے اور خوراک سے گلوکوز کو خون میں تیزی سے شامل ہونے سے روکتا ہے جس کی وجہ سے کھانے کے بعد شوگر ہائی نہیں ہوتی۔ امرود کے پتوں کو ایک دفعہ آزما کر دیکھ لیں آپ جان جائیں گے کے یہ شوگر پر کیسے اثر انداز ہوتے ہیں۔