7 نشانیاں جو آپ کو بتائیں گی کہ آپ ایک گیس لائٹر کی صحبت میں ہیں

Posted by

انگریزی کی ایک ٹرم ہے Gaslighting جسکا مطلب ہے کسی کو جذباتی کر کے تحقیر کا نشانہ بنانا گیس لائٹر عام طور پر ایسے جملے استعمال کرتا ہے "تُم اس بات کو پرسنلی لے رہے ہو، تُم جذباتی ہو رہے ہو اور تمہیں ٹھنڈا ہونے کی ضرورت ہے، تُم میں حس مزاح کی کمی ہے” وغیرہ لیکن ماہرین نفسیات ایسے نفسیاتی حربوں کو فوراً پہچان جاتے ہیں اور اس آرٹیکل میں ماہرین نفسیات کے بتائے ہُوئے ایسے طریقے شامل کیے جارہے ہیں جو آپ کو نفسیاتی طور پر زچ کرنے والوں کی پہچان کروائیں گے۔

نمبر 1 حقیقت پر مبنی سوال

گیس لائٹر عام طور پر ایسا ماحول پیدا کرتے ہیں جس میں کنفیوژن پیدا ہوتی ہو اور اختلاف رائے کو ہوا ملتی ہو اور ایسے موقع پر شکار بننے والے افراد گیس لائٹر افراد سے مغلوب ہوجاتے ہیں اور انہیں پتہ ہی نہیں چلتا کہ اُن کے ساتھ کیا ہوگیا ہے اور وہ نہ سمجھ آنے والی صورتحال پر سوال کرتے ہیں اور اُنہیں ایسے افراد پر بلکل شک نہیں گُزرتا بلکہ وہ انکے اگلے نفسیاتی حملے سے بچنے کے بارے میں سوچنا شروع کر دیتے ہیں۔

ماہرین نفسیات کا کہنا ہے کہ ایسے افراد سے مُلاقات کے دوران اگر ایسی صورتحال پیدا ہو تو اپنی تنقیدی سوچ کو بیدار کریں اور اگر کسی بھی چیز کے متعلق سمجھ نہ آئے تو فوراً سوال کریں اور اپنے خدشات کا اظہار کریں اور دُوسری تکینک میں اپنی جگہ استقامت سے جم جائیں اور تحمل کیساتھ اور حقائق کو مد نظر رکھتے ہُوئے ایسے افراد کے ردعمل کو پہچانیں اور ان کی سوچ پر مزاحیہ تنقید کریں تو گیس لائٹر خاموش ہو جاتے ہیں۔

نمبر 2 آپ کے جذبات کو مجروح کرنا

یہ افراد آپ پرثابت کرنا چاہتے ہیں کہ آپ کی رائے کی کوئی اہمیت نہیں ہے اور وہ آپ کو مجبور کرتے ہیں کہ آپ یقین کریں کے آپ جب بھی بولتے ہیں جذباتی ہو کر بولتے ہیں اور وہ آپ کے خدشات کو ہمیشہ نظر انداز کر دیتے ہیں اور عام طور پر اس طرح کے جملے استعمال کرتے ہیں ” تم صرف پیرانائڈ ہو، تم اوور ایکٹینگ کر رہے ہو”،

ماہرین نفیسات کا کہنا ہے کہ اگر آپ کسی چیز کو ٹھیک سمجھتے ہیں تو دُوسروں کی رائے سے اپنی رائے کو متاثر نہ ہونے دیں اور کسی ایسے ٹریپ میں مت آئیں جس سے گیس لائٹر اپنی ججمینٹ کو آپ پر مسلط کرے۔

نمبر 3 پیار اور لڑائی

G:\Pics Sharing\IMG_0202.JPG

گیس لائٹر کی ایک بڑی پہچان یہ بھی ہے کہ وہ پل میں سونا اور پل میں ماشہ ہوتا ہے یعنی ایک لمحے میں وہ آپ پر ثابت کرے گا کہ اُسے آپ سے بڑا پیار ہے اور اگلے لمحے میں وہ آپ سے ایسے جھگڑ رہا ہوگا کہ آپ کو لگے گا کہ وہ آپ سے شدید نفرت کرتا ہے۔

نفسیات کے ماہرین کا کہنا ہے کہ گیس لائٹر افراد ایسے افراد پر جلد کنٹرول حاصل کر لیتے ہیں جن کے اندر ذہنی تناؤ موجود ہو اس لیے اگر آپ کا رشتہ کسی گیس لائٹر سے ہے تو جھگڑے کے بعد خود کو کمرے بند کر کے رونے پیٹنے سے بہتر ہے کہ آپ اپنا سوشل سرکل پیدا کریں اور لوگوں سے ملاقات کریں اس سے جہاں آپ کو ذہنی سکون ملے گا وہاں آپ معاملے کو درست راہ پر گامزن کرنے کے لیے مزید معلومات حاصل کر پائیں گے۔

نمبر 4 ہمیشہ آپ کا قصور نکلنا

آپ گیس لائٹر کے سامنے جیسے ہی اپنی ذات کا دفاع شروع کریں گے وہ مظلوم بن جائے گا اور آپ قصور وار بنا دے گا وہ بہتان بازی کرے گا اور آپ پر ایسی تہمتیں لگانی شروع کرے گا جن کا آپ سے کوئی واسطہ نہیں تاکہ آپ کی توجہ لڑائی میں کہیں اور چلی جائے اور چونکہ آپ اپنے آپ کا دفاع کر رہے ہیں چنانچہ آپ اس کے ٹریپ میں آ جائیں گے اور ہر بات پر جواب دینے بیٹھ جائیں گے۔

ماہرین نفیسات کہتے ہیں کہ گیس لائٹر سے ایسی باتوں کا بدلہ لینے کی کوشش کرنا اور جواب میں ملتی جلتی باتیں بنانا فضول کام ہے کیونکہ گیس لائٹر کبھی بھی شکست تسلیم نہیں کرتے گا اور آپ کی انرجی کو چوس جائے گا اس لیے آرام سے تحمل سے اپنی ذات پر توجہ دیں اور ایسے افراد سے بچتے رہیں۔

نمبر 5 آپ کو عام فیصلہ بھی نہیں کرنے دے گا

ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ گیس لائٹر کی بہت بڑی نشانی ہے کہ وہ آپ کو عام فیصلہ بھی نہیں کرنے دے گا مثال کے طور پر آپ نے کب سونا ہے یا کونسا بُرش خریدنا ہے اس بات کو وہ آپ کے لیے مسلہ بنا دے گا۔

ایسے افراد کے ساتھ اپنی حدود ڈیفائن کریں اور اُسے ان حدوں کو پار کرنے کی کبھی بھی اجازت نہ دیں وگرنہ وہ آپ کی زندگی میں بے سکونی پیدا کر دیں گے۔

نمبر 6 اپنی بات سے مُکر جانا

جی ہاں یہ گیس لائٹرز کی سب سے بڑی نشانی ہے اور اگر آپ اس کا کوئی ٹھیک حل تلاش نہیں کرتے تو اس حرکت سے آپ کی ذات کو کافی نقصان ہو سکتا ہے۔

ماہرین نفسیات کہتے ہیں کہ انسان کبھی کبھار کوئی کہی ہوئی بات بھول بھی جاتا ہے لیکن اگر کوئی آدمی بار بار ایسا کر رہا ہو تو پھر مجبوراً آپ کو اُس کی کہی ہُوئی باتیں ریکارڈ کرنی پڑیں گی اور وقت آنے پر اُسے سنانی پڑیں گی۔

نمبر 7 وہ آپ کو ہمشیہ طنزیہ انداز سے بُلائے گا

ایسے افراد عام طور پر آپ کے دوستوں اور فیملی کی موجودگی میں آپ کو طنز کا نشانہ بناتے ہیں اور طنز کرنے کے بعد بے تحاشہ ہنستے ہیں۔

اپنی ذات کو ایسے افراد کے لیے اتنا سجیدہ کرلیں کے وہ آپ سے بات کرتے ہُوئے ہچکچائیں اس کے لیے آپ کو مذاق بلکل بند کرنا پڑے گا اور اپنی گفتگو کو ایسے افراد سے محدود کرنا ہوگا اور اپنے ارادے ایسے افراد سے ہرگز تبادلہ خیال نہیں کرنے ہوں گے۔